احساس ایمرجنسی کیش پروگرام کے تحت ایک کروڑ 12 لاکھ خاندانوں کو فی کس 12 ہزار روپے نقدرقم کی فراہمی، ڈاکٹر ثانیہ نشتر

اسلام آباد( تیز ترین) وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے سماجی تحفظ ڈاکٹر ثانیہ نشترکا کہنا ہے کہ وفاقی حکومت کورونا وائرس کے پیش نظر “احساس ایمرجنسی کیش پروگرام” کے تحت ایک کروڑ 12 لاکھ خاندانوں کو فی کس 12 ہزار روپے نقد فراہم کرے گی.  اسلام آباد میں پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے بتایا کہ معاونت حاصل کرنے کے لیے 8171 پر ایس ایم ایس سروس جاری ہے اور ہمیں لاکھوں ایس ایم ایس موصول ہوچکے ہیں. انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت ملک کی تاریخ میں سب سے بڑی ریلیف مہم چلارہی ہے۔ ڈاکٹر ثانیہ نشتر کا مزید کہنا تھا کہ یہ ایک مرتبہ ملنے والی معاونت ہے اور 144 اب روپے اس کام کے لیے مختص کیے گئے ہیں۔

010

انہوں نے کہا کہ اگر احساس ایمرجنسی کیش اسسٹنس کی مانگ میں اضافہ ہوا تو اضافی وسائل حاصل کیے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ تمام وفاقی یونٹس بشمول گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کا کوٹہ مردم شماری کے حساب سے رکھا گیا ہے. معاون خصوصی نے کہا کہ پنجاب نے7 لاکھ افراد اور سندھ نے ڈھائی لاکھ افراد کے لیے اضافی فنڈ بھی رکھا ہے۔ اُن کا کہنا تھا کہ نقد امداد کی منتقلی کو شفاف اور اصول پر مبنی انداز میں یقینی بنایا جائے گا. انہوں نے کہا کہ لوگوں کے ایس ایم ایس پر نقد امداد کے حصول کے لیے 3 طرح کے ردعمل ہوں گے جن میں اہل، نااہل، اور آپ کی ضلعی انتظامیہ سے رابطہ شامل ہے تاہم انہوں نے اس بات کی وضاحت نہیں کی کہ ضلعی انتظامیہ سے رابطے کا مطب کیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ صوبائی اور وفاقی حکومتوں کے ملازمین امداد کے اہل نہیں ہیں. انہوں نے کہا کہ اس وقت ہمارے پاس صوبائی اور وفاقی حکومتوں، ریلوے، پاکستان پوسٹ، اور بینظیر انکم سپورٹ پروگرام (بی آئی ایس پی) کے ملازمین کا ڈیٹا بیس موجود ہے۔ جبکہ امید ہے کہ آئندہ 24 گھنٹوں میں خود مختار اداروں کا ڈیٹا دستیاب ہوگا.  ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے کہا کہ ایس ایم ایس کے جواب میں معاونت کے اہل بننے سے پہلے ویلتھ پروفائلنگ ٹیسٹ سے گزرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ کفالت سے مستفید ہونے والے افراد، جو ماہانہ 2000 روپے نقد رقم کی منتقلی حاصل کررہے ہیں، کو ایک ہزار روپے اضافی دی جائے گی لہذا ان کو بھی چار مہینوں پر محیط 12 ہزار روپے ملیں گے.انہوں نے کہا کہ اس زمرے کے تحت ساڑھے چار لاکھ افراد مستفید ہوں گے انہوں نے کہا کہ اعلٰی اہلیت یا غربت کی دہلیز کو قومی سماجی اقتصادی ڈیٹا بیس کے ذریعہ 40 لاکھ مستحقین کی شناخت کے لئے استعمال کیا جائے گا۔ جبکہ مزید 35 لاکھ افراد مختلف اضلاع سے آئیں گے. ادائیگی کے طریقہ کار کے بارے میں ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے کہا کہ مستحق خاندانوں کو بائیو میٹرک تصدیق کے بعد پاکستان بھر میں حبیب بینک لمیٹڈ اور بینک الفلاح کی 18 ہزار 65 سے زائد سیل پوائنٹس یا خوردہ دکانوں کے ذریعے 12 ہزار روپے کی نقد امداد ملے گی۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.