چین کی سافٹ ویئر انڈسٹری کی آمدنی میں دو ماہ کے دوران ریکارڈ 11.6 فیصد کمی۔

بیجنگ (تیز ترین) چین کی وزارتِ صنت وانفارمیشن ٹیکنالوجی نے کہا ہے، کہ رواں سال پہلے دوماہ کے دوران سافٹ ویئر انڈسٹری کی آمدنی میں 2019 ء کے مقابلے میں 11.6 فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔ جس کی وجہ کورونا وائرس کے نتیجے میں پیداواری و کاروباری سرگرمیوں کی معطلی ہے۔

وزارت صنعت و انفارمیشن ٹیکنالوجی کی جانب سے رپورٹ کے مطابق رواں سال جنوری اور فروری کے دوران کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے باعث سافٹ ویئر ٹیکنالوجی سے ہونے والی آمدنی میں سالانہ بنیاد پر کمی واقع ہوئی ہے۔ دو ماہ کے دوران سافٹ ویئر شعبے کی کل آمدنی 800.8 ارب یوان (114.4 ارب ڈالر) رہی جو 2019 ء کے اسی عرصے سے 11.6 فیصد کم ہے۔ جنوری اور فروری کے دوران سافٹ ویئر انڈسٹری کا خالص منافع 98.1 ارب یوان رہا جو کہ جنوری اور فروری 2019 ء کی نسبت 11.8 فیصد کم ہے۔ سافٹ ویئر کی برآمدات کا حجم جنوری اور فروری کے دوران 5.66 ارب ڈالر رہا جو گزشتہ سال کے پہلے دوماہ کے مقابلے میں 18.9 فیصد کم ہے۔ اس عرصے کے دوران شعبہ سافٹ ویئر میں ملازمین کی تعداد 5.84 ملین (58 لاکھ 40 ہزار) رہی جو سالانہ بنیا د پر 0.9 فیصد زیادہ ہے۔ تاہم قیمتوں کی شرح میں 2.6 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.