چینی بحران پر رپورٹ ذات پر حملہ ہے۔ وزیراعظم عمران خان سے تعلقات اب پہلے جیسے نہیں۔ جہانگیر ترین

پاکستان تحریک انصاف کے سرکردہ رہنما جہانگیر ترین نے چینی بحران پر ایف آئی اے کی رپورٹ کو سیاسی اور اپنی ذات پر حملہ قرار دے دیا۔

اسلام آباد (تیز ترین) صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو میں جہانگیر ترین کا کہنا تھا کہ اس رپورٹ کے پیچھے وزیراعظم کے پرنسپل سیکرٹری اعظم خان ہیں۔ اُن کے اور اعظم خان کے اختلافات 6 ماہ پہلے شروع ہوئے تھے ، وہ مسلسل وزیراعظم کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔

جہانگیرترین کاکہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان کوکہا تھاکہ بیوروکریسی کے چکر سے نکلنا ہوگا۔ وزیراعظم نے میری بات سے اتفاق کیا جب کہ اعظم خان نے کہا کہ حکومت تو ہم چلاتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ میرے پاس زرعی ٹاسک فورس کا کوئی عہدہ نہیں۔ میرے پاس کوئی عہدہ تھا تو نوٹیفکیشن دکھایا جائے۔ چینی پر سبسڈی نئی بات نہیں یہ ہمیشہ دی جاتی ہے۔ ملک میں اس وقت چینی کی قلت نہیں ہے جب کہ تحقیقاتی رپورٹ میں کچھ بھی نہیں ہے۔

وزیراعظم سے تعلقات کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ عمران خان سے جیسے تعلقات پہلے تھے ویسے اب نہیں ۔

خیال رہے کہ  میڈیا رپورٹس کے مطابق آٹا و چینی بحران پر وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) کی رپورٹ سامنے آنے کے بعدجہانگیرترین کو چیئرمین ٹاسک فورس برائے زراعت کے عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے تاہم انہوں نے ایسا کوئی عہدہ رکھنے کی تردید کی ہے۔

دوسری جانب  پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور سابق ترجمان برائے وزیراعلیٰ پنجاب شہباز گل نے ٹوئٹ کی ہے جس میں انہوں نے بتایا ہے کہ جہانگیر ترین کو چیئرمین ٹاسک فورس برائے زراعت کے عہدے سے ہٹادیا گیا ہے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.