قیدیوں کی رہائی، افغان طالبان کا حکومت سے مذاکرات ختم کرنے کا اعلان۔

افغان طالبان نے قیدیوں کی رہائی بارے افغان حکومت سے مذاکرات ختم کرنے کا اعلان کردیا۔

دوحہ ( تیز ترین ) قطر میں افغان طالبان کے سیاسی دفتر کے ترجمان سہیل شاہین نے کہا ہے کہ افغان صدر اشرف غنی کی حکومت حیلے بہانے کرکے قیدیوں کی رہائی میں تاخیر کررہی ہے۔ سہیل شاہین نے ٹوئٹر پر اپنے بیان میں کہا کہ دستخط شدہ معاہدے کے مطابق ہمارے قیدیوں کو جلد رہاکرنا چاہیےتھا، تاکہ بین الافغان مذاکرات کا راستہ ہموار ہوسکے۔ طالبان ترجمان کے مطابق افغان حکومت کی جانب سے قیدیوں کی رہائی میں تاخیر معاہدے کی خلاف ورزی ہے، اس لیے ہم کابل میں موجود اپنی ٹیم کو واپس بلارہے ہیں۔ جو کہ وہاں ہمارے قید ساتھیوں کی تصدیق اور رہائی کے لیے موجود تھی۔

دوسری جانب غیر ملکی میڈیا کے مطابق طالبان سے مذاکرات کرنے والے حکومتی وفد کے ایک رکن کا کہنا ہے، کہ افغان طالبان کی اپنے 15اہم کمانڈرز کی رہائی کا مطالبہ قیدیوں کی رہائی میں تاخیر کی وجہ ہے۔

حکومتی وفد کے رکن کا کہنا ہے کہ افغان طالبان اپنے جن 15 اہم کمانڈرز کی رہائی چاہتےہیں افغان حکومت انہیں رہا نہیں کرنا چاہتی کیونکہ وہ نہیں چاہتی کہ یہ کمانڈرز رہا ہوکر پھر کسی صوبے پر قبضہ کرلیں۔

واضح رہے کہ افغان طالبان کی ٹیم قیدیوں کے تبادلے کے لیے افغان حکومت سے بات چیت کے لیے گذشتہ ایک ہفتے سے کابل میں موجود ہے، اور اس دوران فریقین میں مذاکرات کے متعدد دور ہوچکے ہیں۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.