حکومت نے پاکستانی کمپنیوں کو وینٹی لیٹرز بنانے کی اجازت دے دی۔

وینٹی لیٹرز بنانے والی کمپنیوں کے ساتھ حکومت مکمل تعاون کرے گی۔ پاکستان میں انتقال کرنے والے63 لوگوں میں 78 فیصد مرد ہیں۔ 85 افراد فیصد کی عمر50سال سے زیادہ ہے۔ 73فیصد پہلے بیمار تھے۔معاون خصوصی برائے صحت کی پریس کانفرنس

اسلام آباد ( تیز ترین ) حکومت نے پاکستانی کمپنیوں کو وینٹی لیٹرز بنانے کی اجازت دے دی ہے۔ معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ جو وینٹی لیٹرز بنانے کی خواہشمند کمپنیاں ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کے ذریعے درخواستیں دیں گیں۔ حکومت ایسی کمپنیوں کے ساتھ مکمل تعاون کرے گی۔انہوں کہا کہ عالمی سطح پر 15 لاکھ سے زیادہ مریضوں کا اندراج ہوا ہے۔ پاکستان میں کورونا  کے مریضوں کی تعداد 4 ہزار 322 ہوگئی ہے۔ جس میں 248 نئے متاثرین کا اضافہ ہوا ہے۔ آزاد جموں کشمیر  میں 9 مریضوں کا اضافہ ہوا۔ بلوچستان6 ، گلگت 1، اسلام آباد 10، خیبرپختونخواہ 31، پنجاب141 اور سندھ میں 50 نئے مریض درج ہوئے ہیں۔  پاکستان میں صحتیاب ہونے والے مریضوں کی تعداد 572 ہو چکی ہے۔

گزشتہ 24 گھنٹوں میں 105 لوگ مکمل صحتیاب ہوئے ہیں۔  پاکستان میں کورونا سے اب تک مجموعی طور پر 63 اموات واقع ہوچکی ہیں۔ ان 63 لوگوں میں 78 فیصد مرد ہیں۔ ان میں 50 سال سے زیادہ عمر کے لوگوں کا تناسب 85 فیصد ہے۔ اسی طرح ان اموات میں 73 فیصد وہ لوگ ہیں، جنہیں پہلے ہی کوئی نہ کوئی بیماری تھی۔ انہوں نے کہا کہ عالمی سطح پر شرح اموات 5.82 فیصد ہیں، جبکہ پاکستان میں یہ تناسب 1.46 فیصد ہے ۔ ڈاکٹرظفر نے کہا کہ ڈاکٹرز اور طبی عملہ حفاظتی اقدامات کے حوالے سے حکومتی ہدایات پر عمل کریں۔ لوگ سمجھ رہے شاید پاکستان میں شرح اموات اور مریضوں کی تعدادکم ہے۔ یہ سوچ بہت غلط ہے۔ ہمیں اس پر نہیں جانا بلکہ حفاظتی اقدامات کو یقینی بنانا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت وینٹی لیٹرز بنانے والی کمپنیوں کو سہولت فراہم کرے گی۔ وینٹی لیٹرز بنانے کی خواہشمند کمپنیاں ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کے ذریعے درخواستیں دیں، حکومت ایسی کمپنیوں کے ساتھ مکمل تعاون کرے گی۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.