حکومت کا افغانستان اور ایران میں پھنسے شہریوں کو واپس لانے کا اعلان۔

بیرون ممالک سے آنے والے شہریوں کی کورونا وائرس کی ٹیسٹنگ کی جائے گی اور انہیں 14 دن قرنطینہ میں وقت لازمی گزارنا ہوگا. اسدعمر

اسلام آباد ( تیز ترین ) نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر نے افغانستان اور ایران میں پھنسے ہوئے پاکستانیوں کو وطن واپس لانے کا فیصلہ کرلیا ہے. وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر نے این سی او سی کے اجلاس کے بعد صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ افغانستان اور ایران سے واپس آنے والے پاکستانیوں کی  کورونا وائرس کی ٹیسٹنگ کی جائے گی اور انہیں 14 دن تک قرنطینہ میں وقت لازمی گزارنا ہوگا. انہوں نے کہا کہ اجلاس میں افغانستان میں پھنسے پاکستانیوں کی وطن واپسی اور ایران سے بلوچستان کے 4 سرحدی اضلاع میں ضروری کھانے پینے کے سامان کی ترسیل وزارت صحت کی ہدایات اور معیاری آپریٹنگ کے طریقہ  کار کی بنیاد پر کرنے کے حوالے سے جائزہ لیا گیا. انہوں نے کہا کہ جو پاکستانی واپس آنا چاہتے ہیں انہیں ٹیسٹ اورابتدائی قرنطینہ کے مرحلے سے گزرنا ہوگا۔ ایران سے بلوچستان کے 4 اضلاع میں ضروری کھانے پینے کے سامان کی فراہمی طے شدہ طریقہ کار، وزارت صحت کی گائیڈ لائنز اور ایس او پیز کے مطابق ہوں گی. اجلاس کو بتایا گیا کہ افغانستان میں کارگو کی ترسیل صرف کھانے پینے کی اشیا اور طبی سامان کے لیے ایس او پیز کے مطابق اور ہفتے میں صرف 3 دن کے لیے کی جارہی ہے. وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے اجلاس کو ٹیسٹنگ کی صلاحیت کو بڑھانے کے لئے اقدامات کے ساتھ کورونا وائرس کی ملک میں تازہ ترین صورتحال پر تفصیلی پروگرام دیا۔ این سی او سی نے  کورونا  وائرس کے مریضوں سے صحت یاب ہونے والے مریضوں کے تناسب پر اطمینان کا اظہار کیا۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.