وزیراعلیٰ سندھ کا لاک ڈاؤن 2 ہفتے کے لیے مزید سخت کرنے کا اعلان۔

کم از کم 100ایسی اموات ہوئی ہیں جن پر کورونا کا شبہ ہے۔ ملک میں کورونا مریضوں کی شرح دوسرے ممالک سے کم سمجھنا غلط ہے۔ سمجھ نہیں آرہی کہ کنسٹرکشن انڈسٹری کھولنے کی کیا ضرورت تھی۔وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی میڈیا بریفنگ

کراچی ( تیز ترین ) وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ نے مزید دو ہفتے لاک ڈاؤن سخت کرنے کا اعلان کیا ہے۔کراچی میں میڈیا بریفنگ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ صوبے میں روزانہ ٹیسٹنگ کی استعداد 1500 تک لے آئے ہیں جن میں سے دس فیصد ٹیسٹ پوزیٹیو آرہے ہیں۔ وزیراعلی نے مزید کہا کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کی شناخت ظاہر کرنا مناسب نہیں۔ بہت بڑے بڑے ادارے کے لوگ بھی کورونا سے متاثر ملازم کے نام بتا رہے ہیں۔ بڑا آدمی ہو تو اپنا نام چھپائے۔ چھوٹے ملازم کا نام بتا دے۔ مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ سندھ میں اموات کی شرح 2.4 ہوگئی ہے جو بہت تشویشناک ہے۔ ۔کورونا کے بعض مریضوں کی اسپتال پہنچنے کے چوبیس گھنٹے میں موت واقع ہوئی۔ ۔کچھ ایسے مریض بھی آئے ہیں کہ انہیں اسپتال ہیں مردہ حالت میں پہنچایا گیا۔ ماہرین کا کہنا ہے کہفوت ہونے والے افراد کے پھیپھڑے متاثر ہوئے۔ مزید 15 ایسے افراد ہوئے ہیں جن کی ہم نے تدفین کورونا کے مریضوں کی طرح کروائی۔ ایسی اموات بھی ہے جو رپورٹ نہیں ہورہیں۔ وزیراعلی نے وفاقی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ سمجھ نہیں آرہی کہ کنسٹرکشن انڈسٹری کھولنے کی کیا ضرورت تھی۔ان کا کہنا تھا کہ ملک میں کورونا مریضوں کی شرح دوسرے ملکوں سے کم سمجھنا غلط ہے۔ وزیراعلیٰ نے شہریوں سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ میرا پیغام ہے حکومت جو بھی احکامات جاری کرے گی، اس پرعمل کیا جائے۔ میری خاص درخواست ہے کہ اپنے بزرگوں کوکسی صورت باہرنہ نکالیں اور جب آپ گھر واپس جائیں تو اپنے بزرگوں سے دور رہیں کیونکہ بزرگ حضرات جو وائرس کا شکارہوئے ہیں ان کے اموات کی شرح زیادہ ہے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.