ایتھنز اولمپکس 2004ء میں باکسر عامر خان نے پاکستان کی نمائندگی کرنے سے انکار کردیا تھا۔ سابق انٹرنیشنل ریفری جج علی اکبر شاہ

عامر خان کے چھوٹے بھائی ہارون خان نے مجبوراً 2010ء کے کامن ویلتھ گیمز میں پاکستان کی نمائندگی کی تھی، کیونکہ وہ برطانیہ کی طرف سے اولمپکس میں حصہ نہیں لےپارہے تھے۔

لاہور ( تیز ترین )  پاکستان کے سابق انٹرنیشنل ریفری جج علی اکبر شاہ نے انکشاف کیا ہے کہ پاکستانی نژاد برطانوی باکسر عامر خان نے 2004ء کے ایتھنز اولمپکس میں پاکستان کی نمائندگی کرنے سے انکار کردیا تھا۔ ایک انٹرویو کے دورانانہوں نے کہا کہ 2004ء میں اس وقت کے انٹرنیشنل باکسنگ فیڈریشن کے صدر پروفیسر انور چوہدری نے عامر خان سے کہا تھا کہ وہ ایتھنز اولمپکس میں پاکستان کی نمائندگی کریں۔ لیکن انہوں نے انکار کردیا تھا اور برطانیہ کی نمائندگی کو ترجیح دی تھی۔ عامر خان کے چھوٹے بھائی ہارون خان نے مجبوراً 2010ء میں کامن ویلتھ گیمز میں پاکستان کی نمائندگی کی تھی کیونکہ وہ برطانیہ کی طرف سے اولمپکس میں حصہ نہیں لے پا رہے تھے، بحالتِ مجبوری انہوں نے پاکستان کا انتخاب کیا تھا۔ علی اکبر شاہ نے برطانوی میڈیا کو حسین شاہ کے نام سے منسوب جمنازیم کا پس منظر بیان کرتے ہوئے کہا کہ 2002ء میں بوسان میں منعقدہ ایشین گیمز کے بعد پاکستانی باکسرز نے اس وقت کے صدر جنرل پرویز مشرف سے ملاقات کی تھی۔ جنرل مشرف نے اس موقع پر چاروں صوبائی دارالحکومتوں اور اسلام آباد میں انڈور جمنازیم کے لیے ایک ایک کروڑ روپے کی منظوری دی تھی۔  اسلام آباد کی اکیڈمی کو حسین شاہ کے نام سے منسوب کیا گیا تھا۔ لاہور کی اکیڈمی سید محمد غزنوی،  پشاور کی لالہ امان اللہ خان،  کوئٹہ کی سید ابرار حسین اور کراچی کی اکیڈمی کو پروفیسرانورچوہدری کے نام سے منسوب کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔ علی اکبر شاہ کہتے ہیں کہ اس ملاقات میں اس وقت کے کھیلوں کے نگراں وفاقی وزیر کرنل ٹریسلر اور پاکستان سپورٹس بورڈ کے ڈائریکٹر جنرل بریگیڈئر صولت عباس بھی تھے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.