امریکا کا چین پر خفیہ ایٹمی دھماکے کرنے کا الزام۔

امریکی دعوے کے مطابق چین نے مبینہ طور پر بین الاقوامی معاہدوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے غیر محفوظ جوہری تجربات کیے ہیں۔ چین واضح تردید کرنے سے گریزاں! ۔

بیجنگ ( تیز ترین ) امریکا نے چین پر خفیہ ایٹمی دھماکے کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔ امریکی اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ کے دعوے کے مطابق چین نے مبینہ طور پر بین الاقوامی معاہدوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے غیر محفوظ جوہری تجربات کیے ہیں۔ بین الاقوامی خبر رساں ایجنسی رائٹرز کی جانب سے شائع کردہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ امریکا نے چین پر خفیہ طور پر ایٹمی دھماکے کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔ 1996 کے سی ٹی بی ٹی معاہدے کے تحت جوہری قوت رکھنے والے ممالک پر لازم ہے کہ وہ ایٹمی دھماکے نہیں کر سکتے۔ ان ممالک کو صرف ایسے جوہری تجربات کرنے کی اجازت ہے جس میں دھماکوں کا طریقہ کار اختیار نہ کیا جائے۔امریکا نے مزید الزام عائد کیا ہے کہ جوہری ہتھیاروں کی روک تھام کیلئے چین بین الاقوامی اداروں سے تعاون نہیں کر رہا ہے۔  چین کی جانب سے اگست 2019 کے بعد عالمی اٹامک ایجنسی سے بھی جوہری تجربات کے حوالے سے کسی قسم کا ڈیٹا شیئر نہیں کیا گیا۔ چین کی جانب سے ایٹمی دھماکے یا تجربات کرنے کی تردید نہیں کی گئی۔ چین کا کہنا ہے کہ امریکا کے الزامات مضحکہ خیز ہیں۔ چین ایک ذمے دار ملک ہے جو اپنی عالمی ذمے داریوں سے بخوبی آگاہ ہے۔  چین نے ہمیشہ بین الاقوامی معاہدوں کی پاسداری کی ہے، اور آئندہ بھی  ایسی ہی ذمے داری کا مظاہرہ کرتا رہے گا۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.