عراق نے ایران کے ساتھ تجارتی آمدورفت کے لئے سرحد کھولنے سے انکار کر دیا۔ امریکی اخبار

کرونا وائرس پہلی بار ایران میں آیا تھا۔ عراق کی بڑی کامیابی ہے کہ اس نے کرونا کی وبا کوکافی حد تک قابو میں رکھا ہے۔ رپورٹ

واشنگٹن ( تیز ترین ) امریکی اخبار کے مطابق عراق نے  ایران  سے ایک آزاد ملک کی حیثیت سے اپنے نظریے کو آگے بڑھانے میں کامیابی حاصل کر لی ہے۔  عراق نے ایرانی دباؤ کے باوجود اس کے ساتھ سرحدیں کھولنے سے صاف انکار کر دیا ہے۔ امریکی جریدے کے مطابق  عراق  اور ایران کے درمیان زمینی سرحد کھولنے کے معاملے پر رسہ کشی ہو رہی ہے۔ گاڑیوں کی سرحد پار آمد ورفت اور کراسنگ کھولنے کی تاریخ کے حوالے سے دونوں ممالک کا اپنا اپنا نقطہ نظر ہے اور کوئی بھی پیچھے ہٹنے کو تیار دکھائی نہیں دیتا۔  عراق نے تقریباََ 5 ہفتے قبل کٓرونا وائرس کے پھیلاؤ کو محدود کرنے کے لیے ایران کے ساتھ سرحد سیل کر دی تھی۔ ایران جو اس وائرس سے بہت زیادہ متاثر ہوا ہے عراق کے ساتھ سرحد فوری طور پر کھولنا چاہتا ہے۔اسے اپنی معیشت کو مستحکم کرنے میں مدد کے لیے عراق کے ساتھ تجارت کرنے کی ضرورت ہے، جبکہ خطے کے بیشتر ممالک کے ساتھ سرحدیں کھولنے کا اندیشہ رکھنے والا عراق بھی اس وائرس سے بقا کی جنگ لڑ رہا ہے۔
یہ تنازع ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب عراق پر ایران کا اثر و رسوخ کم کرنے کے لیے دبا بڑھ رہا ہے۔ امریکا اور اس کے اتحادیوں کی طرف سے عراق پر چڑھائی اور صدام حسین کا تختہ الٹے جانے کے بعد ایران کی طرف سے بغداد میں مداخلت بڑھ گئی تھی۔ جریدے کی رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ کرونا وائرس پہلی بار ایران سے عراق میں آیا تھا۔  عراق کی بڑی کامیابی ہے کہ اس نے کرونا کی وبا کو کافی حد تک قابو میں رکھا ہے، اس کے باوجود عراق میں اب تک 82 افراد فوت ہوچکے ہیں۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.