کورونا وائرس چین کی شرارت کا نتیجہ ہے

چینی سائنسدان ووہان کی لیبارٹری میں وائرس کے ساتھ ’پاگل پن کی حرکتیں کر رہے تھے ،ان کی نیت خراب نہیں تھی،مقصد وائرس میں مرض پیدا کرنے کی صلاحیت پر تحقیق کرنا تھا،روسی سائنسدان کا نیا دعویٰ

اسلام آباد ( تیز ترین ) روسی سائنسدان کا دعوی ہے کہ کورونا وائرس ووہان میں تیار ہوا لیکن چین کی نیت خراب نہیں تھی۔ تفصیلات کے مطابق دنیا بھر میں تباہی پھیلانے والے  کورونا وائرس کے بارے میں مختلف قسم کے نظریے پیش کیے جا چکے ہیں۔ چونکہ وائرس کا آغاز سب سے پہلے چین کے شہر ووہان سے ہوا تھا لہذا کچھ ممالک کی جانب سے چین پر الزام عائد کیا گیا کہ وہ یہ وائرس بنانے اور پھیلانے کا ذمہ دار ہے۔ اسی حوالے سے عالمی شہرت یافتہ روسی سائنسدان کا بھی دعوی سامنے آیا ہے کہ کورونا وائرس چین کے شہر ووہان کے سائنسدانوں کی شرارت کا نتیجہ ہے۔روسی سائنسدان کا کہنا ہے کہ چین کی نیت  دنیا  کو  نقصان پہنچانے کی نہیں تھی۔ خبر رساں ادارے کے مطابق مائیکرو بیالوجسٹ پروفیسر پیٹر چوما کوف نے کہا ہےکہ چینی سائنسدان ووہان کی لیبارٹری میں وائرس کے ساتھ ’پاگل پن کی حرکتیں کر رہے تھے ،ان کا مقصد وائرس میں مرض پیدا کرنے کی صلاحیت پر تحقیق کرنا تھا لیکن ان کی تحقیق میں بدنیتی کا عنصر شامل نہیں تھا۔ وہ جان بوجھ کر انسانوں کے لیے جان لیوا وائرس نہیں بنانا چاہتے تھے۔ ممکن طور پر کہ ان کی تحقیق کا مقصد  ایڈز کا علاج تلاش کرنا ہو گا۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.