چینی سائنسدانوں نے بندروں پر کورونا ویکسین کا کامیاب تجربہ کرلیا

بندروں کے جسم میں وائرس داخل کرکے7 دن بعد ویکسین لگائی گئی، جس سے ان کے پھیپھڑوں میں کرونا کی کوئی علامت ظاہرنہیں ہوئیں۔ چینی دوا ساز کمپنی کا دعوی

بیجنگ ( تیز ترین ) چینی سائنسدانوں کا بندروں پر کورونا ویکسین کا کامیاب تجربہ۔ چینی دوا ساز کمپنی  نے کورونا وائرس بندروں کے جسم میں داخل کر کے 7 دن بعد ویکسین کے انجیکشن لگائے۔ جس سے ان بندروں کے پھیپھڑوں میں کورونا کی کوئی علامت ظاہر نہیں ہوئی۔ بندر انفیکشن اور سائیڈ افیکٹس سے بھی محفوظ رہے۔  کورونا وائرس سے انسانی زندگیوں کو محفوظ بنانے کیلئے دنیا بھر کی سائنس لیبارٹریوں میں ویکیسن پر تجربات کیے جا رہے ہیں۔ امریکا اور یورپی ممالک کے سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ 2021ء یا 2020 کے دسمبر سے پہلے ویکسین کا مارکیٹ میں آںا انتہائی مشکل عمل ہے۔ لیکن پہلی بار چینی لیبارٹری میں تیار کی جانے والی ویکسین کے8 بندروں پر کامیاب تجربات کیے گئے ہیں۔ میگزین میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق چینی دواساز کمپنی نے اپنے اعداد و شمار سے متعلق بتایا کہ ویکسین کا بندروں کی ایسی اقسام پر تجربہ کیا گیا جس کی نسل معدوم ہونے کا کوئی خطرہ نہیں ہے۔ بندوں میں 8 کو ویکسین کی دو مختلف مقدار انجیکشن کے ذریعے دی گئی۔ تجربات سے ثابت ہوا ہے کہ ان بندروں میں انفیکشن بھی ختم ہوگئی اور کوئی سائیڈ افیکٹ بھی نہیں ہوا۔  کمپنی نے کامیاب تجربات پر اطمینان اور خوشی کا اظہار کیا ہے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.