تراویح کے لئے طے شدہ ضابطہ کی خلاف ورزی پر علامہ ابتسام الٰہی کیخلاف مقدمہ درج کر لیا گیا۔

نمازیوں کا مناسب فاصلہ نہ رکھنے اور اجتماعی درس دینے کے پاداش میں اہلِ حدیث کے علامہ ابتسام الٰہی ظہیر کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا۔

لاہور ( تیز ترین ) لارنس روڈ لاہور مسجد اہلحدیث میں گزشتہ رات نماز تراویح کے دوران علمائے کرام کی جانب سے جاری کئے گئے 20 نکاتی معاہدے کی خلاف ورزی کی گئی۔ جس پر علامہ ابتسام الٰہی ظہیر کے خلاف تھانہ سول لائنز میں رپورٹ درج کرلی گئی ہے۔
رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ طے کردہ ضابطہ کار کی خلاف ورزی کی گئی اور تقریباََ 350 نمازی کندھے سے کندھا ملا کر اور فاصلے کی احتیاط کو نظر انداز کرکے نماز ادا کررہے تھے۔ نماز کی ادائیگی کے بعد 150 افراد کو اجتماع کی شکل میں بٹھا کر درس بھی دیا گیا۔ مقدمہ درج ہونے کے باوجود مسجد میں دوسری نماز تروایح میں بھی طے کردہ ضابطہ کار پر عمل نہ ہوسکا۔ قبل ازیں حکومت اور علمائے کرام کے مابین رمضان شریف میں مساجد کھولنے اور عبادات کیلئے 20 نکات پر اتفاق ہوا تھا۔ یہ طے ہوا تھا کہ 50 سال سے زائد عمرافراد، بچے اور بیمار لوگ گھر میں ہی نماز ادا کریں گے۔ جبکہ نمازیوں کے درمیان احتیاطاََ کم از کم 6 فٹ کا فاصلہ رکھا جائے گا۔ دریں حالات ڈاکٹرز نے بھی حکومت سے لاک ڈاؤن میں نرمی اور علمائے کرام سے مساجد کھولنے کے فیصلے پر نظرثانی کا مطالبہ کیا ہے۔ 

Facebook Comments

POST A COMMENT.