قومی ایئرلائن میں سماجی فاصلے کی خلاف ورزی پر مسافروں کا شدید غصہ، ٹویٹ وائرل

کیا کورونا جہازکے باہر ہے، جہاز میں نہیں آسکتا۔ سماجی فاصلہ رکھنے کا بہانہ بنا کر کرایہ 1800 ڈ الر تک وصول کیا گیا۔ یہاں مسافروں کو سیٹ چھوڑ کر کیوں نہیں بٹھایا گیا، کیوں سماجی فاصلے کی پالیسی نہیں اپنائی گئی؟ مسافروں کی گفتگو

لاہور( تیز ترین )  پی آئی اے کی طرف سے سماجی فاصلے کی خلاف ورزی پر مسافر خوب برسے۔ مسافروں نے کہا کہ کیا کورونا جہاز کے باہر ہے، جہاز میں کورونا نہیں آسکتا۔ مسافروں کوساتھ ساتھ بٹھا کر سماجی فاصلہ رکھنے کی پالیسی کیوں نہیں اپنائی گئی؟
تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا پر قومی ایئرلائن کے حوالے سے ایک ٹیوٹرویڈیو وائرل ہوئی ہے جس میں


مسافر سماجی فاصلے کی خلاف ورزی پر ایئرلائن عملے پرشدید غصے کا اظہار کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ہمیں بتایا گیا تھا کہ سماجی فاصلہ رکھتے ہوئے مسافروں کو ایک سیٹ چھوڑ کر بٹھایا جائے گا اور اس مد میں زیادہ کرایہ بھی وصول کیا گیا، لیکن یہاں تو سب ساتھ ساتھ بیٹھے ہوئے ہیں، جہاز کھچا کھچ بھرا ہوا ہے، سماجی فاصلہ رکھنے کے اصول پر عمل کیوں نہیں ہو رہا۔
انہوں نہ کہا کہ ہمیں کیوں بے وقوف بنایا جا رہا ہے، ہمیں اس بات سے کوئی غرض نہیں کہ آپ ایک فلائٹ چلائیں یا 10، مسافروں سے 14سو سے 18سو ڈالر تک کرایہ وصول کیا جا رہا ہے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.