علما کی مشاورت کے بغیر فیصلوں سے ملک تصادم کی طرف جائےگا۔ نورالحق قادری

وفاقی وزیر برائے مذہبی امور نورالحق قادری نے کہا ہے کہ علمائے کرام کی مشاورت کے بغیر فیصلوں سے ملک تصادم کی طرف جائے گا۔

اسلام آباد ( تیز ترین ) وفاقی وزیر برائے مذہبی امور نور الحق قادری نے کہا ہے کہ پاکستان سخت لاک ڈاؤن کا متحمل نہیں ہوسکتا۔ غریب مزدور اور دہاڑی دار طبقہ سب سے زیادہ پریشان ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ سخت لاک ڈاؤن کرنا بہت مشکل کام ہےاس سے عام آدمی کی زندگی سب سے زیادہ متاثر ہوگی۔ نجی ٹی وی چینل جیو نیوز کے پروگرام “جرگہ” میں گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا ہے کہ ایسی اطلاعات نہیں ملیں کہ کوئی بھوک سے مرگیا ہو، لیکن چیخ وپکار ضرور ہے۔ دیہی علاقوں میں شادیاں اور تقاریب بھی چل رہی ہیں۔ وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ علمائے کرام کی مشاورت کے بغیر فیصلوں سے ملک تصادم کی طرف جائےگا۔ جبکہ میں اور میرے خاندان کے افراد گھر پر تراویح ادا کررہے ہیں۔ وفاقی وزیر کا یہ بیان اس وقت سامنے آیا ہے جب مختلف مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے افراد کی طرف سے لاک ڈاؤن میں بے احتیاطی اوردوسری جانب بڑھتے ہوئے کرونا مریضوں کے پیشِ نظر ڈاکٹروں اور طبعی عملہ نے حکومت سے لاک ڈاؤن میں نرمی اور علمائے کرام سے مساجد کھولنے کے فیصلے پر نظرثانی کا مطالبہ کیا ہے۔ 

Facebook Comments

POST A COMMENT.