چین نے ووہان میں اپنے ساتھ کورونا وائرس لانے والی امریکی فوجی خاتون ماٹجی بیناسی کی شناخت ظاہر کر دی۔

ماٹجی بیناسی نامی خاتون ہی امریکی حکومت کے ساتھ مل کر سازش کے تحت کورونا کو گزشتہ سال اکتوبر میں چین تک لائیں۔ چینی حکام

بیجنگ ( تیز ترین )  چین نے کورونا وائرس پھیلانے والی امریکی خاتون فوجی کی شناخت ظاہر کر دی ہے۔تفصیلات کے مطابق چین نے اپنے شہر ووہان میں کورونا وائرس پھیلانے والی امریکی فوجی کی شناخت معلوم کرنے کا دعوی کردیا ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ امریکی فوج میں ریزرو فوجی عہدیدار ہی یہ وبا پھیلانے والی خاتون فوجی ہیں۔ اپنی ایک رپورٹ میں چینی حکام  نے دعوی کیا ہے کہ یہی خاتون اپنے ساتھ کورونا وائرس لائی تھی۔ ریزرو خاتون فوجی کا نام ماٹجی بیناسی ہے۔ ان کے شوہر میٹ نے اس نئی پیش رفت کو رات کا بھیانک خواب قرار دیا۔ اگرچہ مارٹجی بیناسی میں کورونا وائرس ٹیسٹ مثبت آیا اور نہ ہی ان میں کسی طرح کی علامات ظاہر ہوئیں تاہم ان پر سازش کے تحت امریکی حکومت کے ساتھ مل کر کورونا وائرس کو گزشتہ سال اکتوبر میں چین تک پہنچانے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ وہ چین میں بطور سائیکلسٹ فوجی جنگی مشقوں میں شرکت کے لئے گئی تھیں۔ چائنیز سوشل میڈیا پر یہ اطلاعات گردش کر رہی ہیں کہ چین اور اس کے بعد دنیا بھر میں کورونا وائرس پھیلانے کی ذمہ دار امریکی فوجی ماٹجی بیناسی ہیں۔ سازشی نظریات میں پہلی مرتبہ ان کا نام مارچ میں سامنے آیا تھا۔
یاد رہے کہ مذکورہ خاتون فوجی نے  چین کے شہروں ووہان میں ملٹری ورلڈ گیمز میں حصہ لیا تھا۔ سائیکل ریس کے آخری چکر میں وہ حادثے کا شکار ہوگئی تھی اور ان کی پسلیاں ٹوٹ گئی تھیں۔ ایک امریکی یوٹیوبر نے اپنی ویڈیو میں دعویٰ تھا کہ کورونا وائرس امریکی فوجی لبارٹری میں بنایا گیا اور اسے بینارسی ملٹری اولمپکس میں شرکت کے موقع پر ساتھ لے گئی تھیں۔ ۔چین نے امریکی حکومت سے مطالبہ کیا تھا کہ ووہان آنے والے امریکی فوجی وفد کی صحت اور انفیکشن انفارمیشن رپورٹ جاری کی جائیں۔
جبکہ بیناسی نے اس الزام کے کے حوالے سے کہا ہے کہ انہیں اس سازشی نظریہ ماننے والے افراد سے مسلسل دھمکیاں مل رہی ہیں، کیونکہ سوشل میڈیا پر ان کے گھر کا پتہ بھی جاری کیا گیا ہے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.