بھارت میں مسلمانوں کے بعد سکھ کورونا پھیلانے کے ذمہ دار قرار

مسلمانوں کے بعد سکھ برادری کیخلاف پروپیگنڈا کیا جارہا ہے۔ سربراہ سکھ مذہبی کمیونٹی ہریپ سنگھ

نئی دہلی( تیز ترین ) سربراہ سکھ مذہبی کمیونٹی ہریپ سنگ نے کہا ہے کہ ہندوستان میں مسلمانوں کے بعد سکھ برادری کو کورونا وائرس پھیلانے کا ذمہ دار ٹھہرانے کا پروپیگنڈا سرگرم ہے۔
تفصیلات کے مطابق انتہا پسند ہندوؤں کی جانب سے ہندوستان میں موجود اقلیتوں کو تنگ کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ تاہم اس لاک ڈان اور ہنگامی حالات کا ذمہ دار بھی بھارت میں موجود اقلیتوں کو ٹھہرایا جا رہا ہے۔
کچھ دن پہلے بھارت میں موجود مسلمانوں کو کورونا وائر س کے پھیلاؤ کا ذمہ دار قرار دیا گیا تھا اورالزام لگایا گیا تھا کہ تبلیغی جماعتوں میں شریک افراد نے بھارت میں کورونا پھیلایا، تاہم اب سکھ برادری پر الزام تراشی کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ سکھ رہنما ہریپ سنگھ نے کہا ہے کہ ہمارے چند افراد میں کرونا وائرس کے ثابت ہونے کی وجہ سے پوری سکھ برادری کو اس کا ذمہ دار قرار نہیں دیا جا سکتا۔
انہوں نے مزید کہا کہ مسلم برادری پر الزامات لگانے کے بعد اب الزامات کا رخ سکھ برادری کی جانب موڑ دیا گیا ہے
انہوں نے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا ہے کہ دربار سے واپس آںے وال 3000 ہزار میں سے 115 افراد میں کورونا کی نشاندہی کی گئی ہے۔ لیکن اس بنیاد پر یہ الزام تراشی درست نہیں کہ سکھ برادری کرونا وائرس پھیلانے کے ذمہ دار ہیں۔
قبل ازیں یہ الزام دہلی میں دعوتِ تبلیغ کا کام کرنے والے مسلمانوں پر لگایا تھا۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.