مولانا طارق جمیل کا سوشل میڈیا پر حامد میر کیخلاف چلنے والی مہم سے اظہارِ بیزاری

مولانا طارق جمیل اور حامد میر کے درمیان ٹیلیفونک رابطہ ہوا۔ حامد میر نے مولانا طارق جمیل کی سے معافی مانگی۔

لاہور( تیز ترین ) معروف عالم دین مولانا طارق جمیل نے حامد میر کے خلاف سوشل میڈیا پر چلنے والی مہم سے اظہارِ بیزاری۔ مولانا طارق جمیل اور سینئر صحافی حامد میر کے درمیان ٹیلیفونک رابطہ ہوا ہے، جس میں مولانا طارق جمیل نے بتایا کہ آپ کے خلاف مہم کے پیچھے میں نہیں ہوں۔ حامد میر نے مولانا کی دل آزاری پر معافی مانگی۔
تفصیلات کے مطابق وزیراعظم کی ٹیلی تھون نشریات میں مولانا طارق جمیل نے دعا کروائی تھی، جس میں خواتین سے متعلق بھی دعا کی۔ معاشرے میں موجود بہت سارے اہم ستون، عدلیہ، میڈیا اور عوام کے قول و فعل میں تضاد پر اعتراض کیا جس پر میڈیا کے کچھ اراکین کو تحفظات تھے۔

مولانا طارق جمیل نے اپنی گفتگو میں کہا تھا کہ اگر ڈاکٹر کہتے ہیں کہ مساجد میں جانے سے کورونا پھیلتا ہے تو لوگوں کو مساجد میں نہیں جانا چاہیے۔ ٹی وی پروگرام میں حامد میر اور طارق جمیل کے درمیان بات ہوئی تو مولانا طارق جمیل نے بات بڑھانے کی بجائے اپنے الفاظ پر معافی مانگی۔ مولانا طارق جمیل نے جب معافی مانگی تو بات ختم ہونے کی بجائے مولانا طارق جمیل سے محبت کرنےوالوں نے سوشل میڈیا پر حامد میر کے خلاف ایک محاذ بنا لیا۔
 حامد میر نے الزام لگایا تھا کہ اس ساری مہم کے پیچھے مولانا طارق جمیل ہیں۔ ذرائع کے مطابق مولانا طارق جمیل نے اینکر پرسن محمد مالک کو فون کر کے کہا کہ حامد میر نے کہا کہ شاید ان کیخلاف مہم کے پیچھے میں ہوں۔انہوں نے واضح کیا کہ اس مہم سے میرا کوئی تعلق نہیں ہے۔  سوشل میڈیا پر جو کچھ بھی ہورہا ہے مجھے نہیں معلوم یہ کون لوگ ہیں۔ میرے کندھے پر رکھ کر بندوق چلا رہے ہیں۔ اور یہ کہ میرے پاس حامد میر کا نمبر نہیں ہے، ان کو میری طرف سے بتا دینا۔ مولانا طارق جمیل نے حامد میر کو فون پر پیغام بھیجا۔
جس کے جواب میں حامد میر نے مولانا طارق جمیل کو فون کیا۔ مولانا طارق جمیل نے بتایا کہ آپ کے خلاف  سوشل میڈیا پر جو کچھ بھی ہورہا ہے کہ اس کے پیچھے میں نہیں ہوں، حامد میر نے کہا کہ اگر میری جانب سے دل آزاری ہوئی تو میں معافی مانگتا ہوں اور اس طرح دونوں میں صلح ہوگئی۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.