لاک ڈاؤن کے معاملے پر سندھ حکومت اور تاجروں کے مابین معاملات طے پاگئے۔

متحدہ قومی مؤمنٹ کے کنور جمیل، خواجہ اظہار الحسن اور وسیم اختر کی کوششوں سے سندھ حکومت اور تاجروں کے مابین لاک ڈاؤن سے متعلق معاملات طے پا گئے۔

کراچی ( تیز ترین ) تفصیلات کے مطابق طے پایا ہے کہ ہفتہ اور اتوار کو سندھ بھر میں مکمل لاک ڈاؤن ہوگا۔ اس سے قبل سندھ کے تاجروں نے بازار، دکانیں اور شاپنگ مال کھولنے کا اعلان کیا تھا۔ جس کے بعد تاجر برادری کے مسائل کے حل کے لئے تاجروں کے وفد نے ایم کیو ایم رابطہ کمیٹی کے ساتھ وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ سے ملاقات کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ اس بات کا فیصلہ جمعہ کو ایم کیو ایم کے وفد کی وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ سے ہونے والی ملاقات میں کیا گیا۔
ایم کیو ایم پاکستان کے وفد میں کنور نوید جمیل، وسیم اختر اور خواجہ اظہار الحسن شامل تھے ملاقات میں وزیر اعلی سندھ کے علاوہ وزیراطلاعات ناصر حسین شاہ ، وزیرتعلیم سعید غنی، ترجمان سندھ حکومت مرتضٰی وہاب اورصوبائی وزیر سہیل انورسیال شریک تھے۔ ایم کیو ایم کے وفد نے اہم نکات پر توجہ مرکوز کرائی تھی کہ تاجروں سے فوری ملاقات کر کے ان کے مسائل حل کئے جائیں۔  کاروبار کھولنے کے حوالے سے جلد حتمی فیصلہ کیا جائے، تاجر برادری کے ساتھ سندھ پولیس کے ناروا رویے پر سخت ایکشن لیا جائے۔  ایم کیو ایم کے وفد نے کہا کہ کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ کو فعال کرکے شہریوں کو درپیش مسائل حل کئے جائیں۔ وزیر اعلی سندھ نے ایم کیو ایم کے مطالبات تسلیم کرتے ہوئے تاجر برادری اور ایم کیو ایم کے نمائندوں سے ملاقات کا فیصلہ کیا تھا۔ مذاکرات میں طے پایا ہے کہ سندھ بھر میں ہفتہ اور اتوار کو مکمل لاک ڈاؤن کیا جائے گا

Facebook Comments

POST A COMMENT.