امریکہ کے الزامات کے جواب میں چین کا شدید ردِعمل

امریکی سیاستدانوں اور میڈیا کے الزامات من گھڑت ہیں۔ چینی وزارت خزانہ نے 24 امریکی الزامات کو مسترد کر دیا

بیجنگ ( تیز ترین ) امریکہ کے الزامات کے جواب میں چین نے بھی ردعمل دیا ہے۔ چین نے کورونا پھیلانے سے متعلق 24 امریکی الزامات کو مسترد کر دیا ہے۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے لگائے جانے والے الزامات پرچین کی جانب سے شدید ردعمل کا اظہار کیا گیا اور امریکہ کی طرف سے لگائے گئے 24 الزامات کو مسترد کر دیا ہے۔ امریکی الزامات کا جواب دیتے ہوئے چین کے وزارت خارجہ کی جانب سے 11 ہزار الفاظ پر مشتمل آرٹیکل شائع کیا گیا ہے۔
چینی وزارت خارجہ نے موقف اختیار کیا ہے کہ امریکی سیاستدان اور میڈیا نے چین پر بے بنیاد الزامات لگائے ہیں۔ یہ بات بھی قابلِ امر ہے کہ کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے بعد سے امریکی صدر چین کو اس کا ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے الزامات عائد کر چکے ہیں۔جبکہ اس دفعہ چین نے امریکی صدر کے ا لزامات کا سخت جواب دیا ہے۔
امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ چین  امریکہ کے ساتھ تجارتی معاہدے پر بات چیت کرنا چاہتا ہے لیکن وہ اس کے خواہش مند نہیں ہیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ میں نے سنا ہے کہ وہ تجارتی معاہدے پر دوبارہ بات چیت کرنا چاہتے ہیں، تاکہ یہ ان کے لئے بہتر سودا ثابت ہوسکے۔ لیکن میں اس کا خواہش مند نہیں ہوں۔ یہ دیکھنا دلچسپ ہوگا کہ وہ اس معاہدے پر برقرار رہتے ہیں کہ نہیں جس پر انہوں نے دستخط کئے تھے۔ ٹرمپ نے اس سے پہلے چین کو دھمکی دیتے ہوئے کہا تھا کہ اگر چین وعدے کے مطابق 250 بلین ڈالر کی امریکی اشیاء نہیں خریدتا تو وہ معاہدے کو منسوخ کر دیں گے۔ معاہدے کے نفاذ پر گزشتہ ہفتے دونوں ممالک کے تجارتی وفود نے بات چیت کی تھی۔ یاد رہے کہ کورونا وائرس سے قبل دونون ممالک کے درمیان معاشی جنگ بھی جاری تھی ، جس میں دونوں ممالک نے ایک دوسرے پرٹیکس بھی عائد کئے تھے۔ ۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.