بھارت میں کورونا کے بے بنیاد الزام میں مسلمانوں کو ہراساں کرناافسوسناک ہے۔ امریکہ

مسلمانوں کے خلاف بیان بازی، ہراساں کیا جانا اورحملوں جیسے واقعات نا پسندیدہ عمل ہے۔ امریکی سفیر

واشنگٹن ( تیز ترین ) ایک اعلیٰ امریکی سفارت کار نے کہا ہے کہ امریکہ کو بھارت میں کورونا کی بنیاد پرمسلمانوں کے خلاف بیان بازی اور انہیں ہراساں کیے جانے کی افسوسناک خبریں سننے کی ملی ہیں ۔ کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق بین الاقوامی سفیر برائے مذہبی آزادی سام براون باک نے دنیا بھر میں مذہبی اقلیتوں پر کورونا کے اثرات کے بارے میں ایک کانفرنس کے دوران ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ انہوں نے بدقسمتی سے کورونا کے تناظر میں مسلم برادری کے خلاف خاص طور پر بیان بازی اور ہراساں کرنے کی خبریں دیکھی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ جعلی خبروں اورغلط معلومات کو سوشل میڈیا کے ذریعے شیئر کرنے کی وجہ سے اس کی شدت بڑھ گئی ہے۔سام براون باک نے کہا کہ ایسے واقعات بھی سامنے آئے ہیں کہ کورونا وائرس پھیلانے کے مبینہ الزام میں مسلمانوں پر حملے بھی کیے گئے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.