حکومت کا مدارس کھولنے کی اجازت دینے سے معذرت

مدارس کھولنے کی اجازت دی تو سکول اور پرائیوٹ تعلیمی ادارے بھی کھولنا پڑیں گے۔ وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود

اسلام آباد ( تیز ترین ) حکومت نے مدارس کھولنے سے معذرت کر لی۔ وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود اور اتحاد تنظیمات مدارس دینیہ کے وفد کے درمیان آج مدارس کھولنے سے متعلق مذاکرات ہوئے۔ مذاکرات میں دینی مدارس کے رہنماؤں کی قیادت قاری حنیف جالندھری نے کی۔ وفد کی جانب سے مدارس کھولنے پر اصرار کیا گیا، تاہم وزیرتعلیم نے اجازت دینے سےمعذرت کی۔ مدارس کھولنے سے متعلق علماء نے سوال کیا کہ اگر ملک میں باقی سرگرمیاں ہو سکتی ہیں تو مدارس کیوں نہیں کھولے جاسکتے۔ مدارس کو طے شدہ ایس او پیز کے تحت کھولنے کی اجازت دی جائے۔ اس پر وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے بتایا کہ اگر مدارس کھولنے کی اجازت دی گئی تو سکولز اور پرائیوٹ تعلیمی ادارے بھی کھولنا پڑیں گے، جس سے کورونا وباء مزید پھیلنے کا خطرہ ہے اور طلباء خطرے میں پڑسکتے ہیں۔ وزیر تعلیم نے بتایا کہ اس وقت کورونا کی صورتحال بگڑ رہی ہے، مدارس کھولنے کی اجازت نہیں دے سکتے، صوبے پہلے ہی بعض اقدامات پر ہم سے نالاں ہیں اس لیے فی الحال مدارس نہیں کھولے جاسکتے۔
وفاقی حکومت کے جواب پر مدارس نے لائحہ عمل طے کرنے کے لئے اجلاس طلب کرلیا ہے۔ جبکہ پنجاب حکومت نے صوبےکے سرکاری سکولوں میں درسی کتابوں کی تقسیم کا سلسلہ بحال کر دیا ہے۔ انتطامیہ نے گزشتہ روز شیڈول کے تحت لاہور کے سرکاری سکولوں میں دسویں جماعت کی کتابیں تقسیم کیں جبکہ اگلے مرحلے میں آج بروزمنگل نویں کلاس کی درسی کتب تقسیم کی جائیں گی۔ اس کے بعد صوبے کے تمام سکولوں میں کتب کی تقسیم شروع کردی گئی ہے۔ یہ امر قابلِ ذکر ہے کہ پرائیویٹ سکولوں کی جانب سے کئی بار سکول کھولنے کا مطالبہ کیا گیا ہے تاہم حکومت نے ابھی تک سکول کھولنے کی اجازت نہیں دی ہے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.