جولائی کے وسط سے کرونا کا زورکم ہوتا جائے گا

کرونا وائرس جسے ہونا تھا ہو گیا۔ وائرس پر قابو لاک ڈاؤن سے نہیں بلکہ احتیاط اور ایس او پیز پر عمل درآمد سے ختم ہو گا۔ وائس چیئرمین کورونا ایڈوائزری گروپ پنجاب ڈاکٹر اسد اسلم

لاہور ( تیز ترین ) پروفیسر ڈاکٹر اسد اسلم کا کہنا ہے کہ 15 جولائی سے کرو نا کا زورکم ہوتا جائے گا۔تفصیلات کے مطابق پنجاب کے کورونا ایڈوائزری گروپ کے وائس چیئرمین پروفیسر ڈاکٹر اسد اسلم نے خوشخبری سنائی ہے کہ 15 جولائی سے کرونا وائرس کا زور کم ہونا شروع ہو جائے گا۔ ۔نجی ٹیلی ویژن سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کرونا وائرس جسے ہونا تھا، ہوگیا۔ پنجاب کرونا ایڈوائزری گروپ کے وائس چیئرمین نے مزید کہا کہ کرونا وائرس لاک ڈاؤن سے نہیں بلکہ ایس او پیز پر عمل درآمد کرنے سے ختم ہوگا۔ پروفیسر ڈاکٹر اسد اسلم کے مطابق کوئی ڈاکٹر ایئر ٹائٹ کٹ پہن کر مسلسل 6 گھنٹے کرونا وارڈ میں ڈیوٹی نہیں دے سکتا۔ تاہم اس کے برعکس وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ جولائی کے آخر یا اگست میں کورونا کی شدت آئے گی۔ انتہا کے بعد وائرس کا پھیلاؤ کم ہونا شروع ہوجائے گا۔ آج احتیاط کرلی تو مشکل وقت سے بچ جائیں گے۔ احتیاط نہ کی تو امریکا اور یورپ کی طرح برا وقت آسکتا ہے۔ ماسک لازمی پہنیں۔ اس سے وائرس 50 فیصد کم پھیلتا ہے۔ انہوں نے کرونا وائرس کی صورت حال پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ اگر آج احتیاط نہ کی گئی تو بڑا مشکل وقت آنے والا ہے۔ لاک ڈاؤن کا مطلب یہ نہیں کہ کرونا وائرس ختم ہوجائے گا۔ لاک ڈاؤن سے وائرس کے پھیلاؤ میں کمی آجاتی ہے۔ دنیا کے امیر ترین ممالک نے لاک ڈاؤن کھول دیا ہے، کیونکہ لاک ڈاؤن کے منفی اثرات آتے ہیں۔ جہاں ایک لاکھ لوگ کرونا سے مرگئے ہیں ان لوگوں نے بھی ایس اوپیز کے تحت لاک ڈاؤن کھول دیا ہے۔ ایس اوپیز سے وائرس کا پھیلاؤ بہت آہستہ ہوگا۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.