عالمی عدالتِ انصاف کا امریکی پابندیوں پر اظہارِ افسوس

 امریکہ اور اسرائیل عالمی عدالت انصاف کے خلاف متحد ہو گئے ہیں، مگر یہ عدالت خواہ افغانستان ہو، یا فلسطین، تمام مسائل کا جائزہ لے گی اور یہ اس کے فرائض میں شامل ہے۔ عالمی عدالت انصاف

ہیگ ( تیز ترین ) عالمی عدالت انصاف نے اپنے خلاف امریکی پابندیوں پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے ان پابندیوں کو انتقامی کاروائی قرار دیا ہے۔
تفصیلات کے مطابق بین الاقوامی کریمنل کورٹ (عالمی عدالتِ انصاف) کے پراسیکیوٹر فاتو بینسودا نے فرانسیسی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ بین الاقوامی فوجداری عدالت کے خلاف امریکی پابندیاں افسوسناک اور باعث تشویش ہیں۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ کا اس قسم کا اقدام عدالت کے عمل میں مداخلت شمار ہوتا ہے۔ بینسودا نے کہا کہ اس قسم کی پابندیاں عالمی عدالت کے بجائے دہشت گردوں اور اسمگلروں کے خلاف عائد کئے جانے کی ضرورت ہے۔جب کہ یہ پابندیاں وکلاء اور ایک بین الاقوامی ادارے کے خلاف لگائی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ و اسرائیل عالمی عدالت انصاف کے خلاف متحد ہو گئے ہیں مگر یہ عدالت چاہے افغانستان ہو یا فلسطین، تمام مسائل کا جائزہ لے گی اور یہ اس کے فرائض میں شامل ہے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.