عزیر بلوچ کے سرکی قیمت کیوں ختم کی گئی اور اس سے بھتے لینے والے لوگ کون تھے۔

بات کریں گے تو پیپلزپارٹی کی لیڈرشپ کے لئے مشکلات میں پیدا ہونگیں۔ وفاقی وزیر ڈاکٹر فہمیدہ مرزا

اسلام آباد ( تیز ترین ) پاکستان پیپلز پارٹی کی سابق رہنما، سابق سپیکر قومی اسمبلی اور وفاقی وزیر ڈاکٹر فہمیدہ مرزا نے کہا ہے کہ میں نےسنا تھا کہ عزیر بلوچ بھتےلیتا رہا لیکن کیا کوئی عزیربلوچ سے بھی بھتہ لے سکتاتھا۔ انہوں نے سوال کیا کہ عزیر بلوچ کے سرکی قیمت کیوں ختم کی گئی۔ اس سے بھتےلینے والے کون تھے۔ امریکہ سے فون کرکے جلسے کون کراتا رہا۔ مختلف پارٹیاں جرائم پیشہ افراد کو استعمال کرتی رہیں۔ذوالفقار مرزا نے 2011 کے آغاز میں ہی استعفیٰ دے دیا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم بات کرینگے تو پیپلزپارٹی کی لیڈرشپ کے لئے مشکلات پیدا ہونگیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ عزیر بلوچ کی جے آئی ٹی رپورٹ کو عدالت میں لایاجائے اور سوالات پوچھےجائیں۔ ان سے پوچھا جائے کہ عزیر بلوچ کے سرکی قیمت کیوں ختم کی گئی۔ یہ بھی پوچھا جائے عزیرسے بھتے کون لیتاتھا۔ ان کا کہنا تھا کہ ذوالفقار مرزا نے اپنی فیملی کو خطرے میں ڈالا۔ ہماری فیملی نے کھویا ہے، پایا کچھ نہیں۔ کراچی اور سندھ میں جو بھی واقعات ہوتے تھے ذوالفقارمرزا اپنی ذمہ داری سمجھتے تھے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.