آذربائی جان اور آرمینیا کی جھڑپیں جنگ کی شکل اختیار کرنے لگیں۔

اتوار کی شام سے شروع ہونے والی جھڑپوں کے دوران 16 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ کے آذربائی جان کے7 اور آرمینیا کے 4 فوجیوں کی ہلاکت کی اطلاعات ہیں۔

باکو ( باکو ) آذربائی جان اور آرمینیا کے درمیان چھڑنے والی لڑائی باقاعدہ جنگ کی شکل اختیار کرنے لگی ہے۔ دونوں ممالک کی افواج کے درمیان سرحد پر جاری شدید جھڑپوں کے دوران 16 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ جن میں سے آذربائی جان کے 7 جب کہ آرمینیا کے 4 فوجیوں کی ہلاکت کی اطلاعات ہیں۔
تفصیلات کے مطابق آذربائی جان اور یورپی ملک آرمینیا کی افواج کے درمیان دوبارہ سے مسلح جھڑپیں شروع ہو گئی ہیں۔ آذر بائی جان کی شمالی سرحد پر دونوں ممالک کی افواج کے درمیان اتوار کے دن جھڑپیں شروع ہوئیں۔ ان جھڑپوں کے دوران دونوں اطراف کی فوجوں نے شدید شیلنگ کی۔ دونوں ممالک کے درمیان 3 دن سے جھڑپیں جاری ہیں اور اس کی شدت میں اضافہ ہو رہا ہے۔ اس خدشے کا اظہار کیا جا رہا ہے کہ یہ جھڑپیں اب باقاعدہ جنگ کی شکل اختیار کرتی جا رہی ہیں۔ فائرنگ اور شیلنگ کے سبب دونوں اطراف کئی فوجی شدید زخمی بھی ہوئے ہیں جن کی حالت تشویش ناک بتائی گئی ہے۔ فوجی اہلکاروں کے علاوہ شہریوں کی بھی اموات ہوئی ہیں۔ آذربائی جان کا مؤقف ہے کہ اشتعال انگیزی کا آغاز آرمینیا کی جانب سے کیا گیا۔ دونوں ممالک کے درمیان کئی برسوں سے تنازعہ چل رہا ہے۔ آذربائی جان کا دعویٰ ہے کہ آرمینیا نے اس کے کچھ علاقوں پر قبضہ کر رکھا ہے۔ آذربائی جان کو اس تمام تنازعے میں ترکی کی حمایت حاصل ہے۔ آخری بار شدید جھڑپیں 2016 میں ہوئی تھیں، جس میں دو طرفہ بہت جانی نقصان اٹھانا پڑا تھا۔           

Facebook Comments

POST A COMMENT.