ٹرمپ کا اسرائیل کو تسلیم کرنے کی امید پرسعودی عرب نے دو ٹوک جواب دے دیا۔

سعودی عرب خود مختار فلسطینی ریاست کے قیام سے کم کسی قیمت پر اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم نہیں کرےگا۔ جس کا دار الحکومت یروشلم بنے گا۔ شاہی خاندان کے سینئر رکن ترکی الفیصل کا بیان

الریاض (تیز ترین ) سعودی شاہی خاندان کے سینئر رکن شہزادہ ترکی الفیصل نے کہا ہے کہ سعودی عرب خود مختار فلسطینی ریاست کے قیام سے کم کسی بھی قیمت پر اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم نہیں کرے گا۔
تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان اور ولی عہد محمد بن سلمان پر زور دیا تھا کہ وہ متحدہ عرب امارات کے بعد اسرائیل کے ساتھ معاہدہ کرے اور یہودی ریاست کو تسلیم کرے۔ امریکی صدر ڈؤنلڈ ٹرمپ نے اس حوالے سے ایک پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ اُنہیں توقع ہے کہ امارات کے بعد سعودی عرب بھی جلد ہی اسرائیل کے ساتھ معاہدے کا اعلان کرے گا۔
اس موقع پرٹرمپ سے جب پوچھا گیا کہ کیا سعودی عرب بھی امارات کی طرح اسرائیل کو تسلیم کرے گا تو ان کا کہنا تھا کہ مجھے توقع ہے کہ امارات کی طرح امریکا کا دوست سعودی عرب بھی اسرائیل کو تسلیم کرنے میں دیر نہیں کرے گا۔
اس امید اور بے جا دباؤ پرسعودی عرب کا ردعمل بھی سامنے آیا ہے۔ سعودی شاہی خاندان کے سینئر رکن شہزادہ ترکی الفیصل نے زور دیتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب خود مختار فلسطینی ریاست کے قیام سے کم کسی بھی قیمت پر اسرائیل کےساتھ تعلقات قائم نہیں کرے گا۔ آزاد اور خود مختار فلسطین ریاست کا دار الحکومت یروشلم بنے گا۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.