دوپہر کو سونے کا سب سے بڑا فائدہ کیا ہے؟ جاننے کے بعدآپ اس کو اپنی عادت بنا لیں گے

دوپہر کو سونے کا سب سے بڑا فائدہ کیا ؟ جان کر آپ اس کام کو اپنی عادت بنا لیں گے

اگر تو آپ اپنے دماغی کارکردگی کو ساری عمر میں بہترین رکھنا چاہتے ہیں تو قیلولے جیسی آسان سنت نبوی صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کو اپنالیں جو کہ صحت مندی کو فروغ دینے کا باعث بنتی ہے۔ یہ بات امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی۔ امریکن ہیلتھ اینڈ ایجنگ فاﺅنڈیشن کی تحقیق میں بتایا گیا کہ دن میں ایک گھنٹے کی نیند دماغ کو بڑھاپے سے تحفظ دیتی ہے

یہ یاداشت کو بہتر بناتی ہے۔ وہ سنت نبوی جو آپ کو صحت مند بنادے اس تحقیق کے دوران 65 سال سےزائد عمر کے 3000 افراد کا جائزہ لیا گیا اور معلوم ہوا کہ ایک گھنٹے کا قیلولہ (نہ اس سے کم اور نہ اس سے زیادہ) ہی جسمانی و ذہنی صحت کے لیے فائدہ مند ثابت ہوتا ہے۔محققین کا کہنا تھا کہ دوپہر کو ایک گھنٹے سونے والے افراد نے یاداشت کے ٹیسٹوں میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا جبکہ اس عادت سے دور رہنے والے بری طرح ناکام ہوئے

تحقیق میں بتایا گیا کہ قیلولے کی عادت  دماغی عمر کو 5 سال تک کم کرتی ہے جب کہ دوپہر میں نہ سونے والے افراد کے دماغوں کی عمر 5 سال زیادہ ہوتی ہے۔ محققین کے مطابق یہ عادت دماغی افعال کے لیے بہت زیادہ فائدہ مند ہے۔ اس سے پہلے گزشتہ سال جرمنی کی سارلینڈ یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا تھا کہ دوپر کو 45 منٹ تک سونا یاداشت کو 5 گنا بہتر بنانے میں مدد دیتا ہے۔ دوپہر کو نیند کا بہترین وقت کونسا ہوتا ہے؟ تحقیق میں بتایا گیا کہ نیند کے دوران دماغی سرگرمیاں نئی معلومات کو محفوظ رکھنے کے لیے اہمیت رکھتی ہیں اور صرف 45 منٹ کا قیلولہ یاداشت کو پانچ گنا تک بہتر بناتا ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ دن میں کچھ دیر کی نیند سیکھنے کے عمل میں کامیابی میں مددگار ثابت ہوسکتی ہے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.