ن لیگ نے آئی جی سندھ کے اغواء اور کیپٹن صفدر کی گرفتاری کا ذمہ دار وزیراعظم عمران خان کو قرار دیا۔

ہمارے پاس شواہد ہیں کہ وزیراعظم نے چادر و چاردیواری کے تقدس کو پامال کرنے کا حکم دیا۔ اس لیے اس واقعے کی تمام تر ذمہ داری عمران خان پر ہی عائد ہوتی ہے۔ شاہد خاقان عباسی کی میڈیا سے گفتگو

اسلام آباد ( تیز ترین ) مسلم لیگ ن نے آئی جی سندھ مشتاق مہر کے مبینہ اغواء کا ذمہ دار وزیراعظم عمران خان کو قراردیا۔ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ آئی جی سندھ کے گھر کے محاصرے اور اغوا کی ذمہ داری وزیراعظم عمران خان پر عائد ہوتی ہے۔
تفصیلات کے مطابق میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے رہنما اور سابق وزیراعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ نوازشریف کے داماد کیپٹن (ریٹائرڈ) صفدراعوان والا معاملہ 4 دن سے چل رہا ہے۔ اس حوالے سے واقعہ کی کئی پیچیدگیاں اور حقائق سامنے آرہے ہیں۔ معاملات بہت سنگین معلوم ہوتے ہیں، کیوںکہ آئین کو توڑاگیا، اور حقیقت یہ ہے کہ حکومت چادراور چار دیواری کی تقدس کو پامال کررہی ہے۔ جس کا حکم براہ راست وزیراعظم عمران خان کی طرف سے دیا جا رہا ہے، ایسے واقعات کی وجہ سے وزیراعظم نے ناصرف خود حلف توڑا بلکہ اپنے ساتھ افسران کو بھی حلف توڑنے کا حکم دیا۔ پولیس آفیسر کو اغوا کرنے اور آئین کو توڑنے پرعدالتوں کی طرف سے سوموٹو ایکشن بھی نہیں لیا گیا، حالانکہ اس واقعہ کے ذریعے سے وفاق ایک صوبے پر حملہ آور ہوا جو ایک حقیقت ہے۔
انہوں نے کہا کہ آئی جی سندھ کو اغواء کرکے مقدمہ درج کرنے کا دباؤ ڈالا گیا، آئی جی کے گھر کا محاصرہ کرنے والے دونوں ادارے وفاق کے ماتحت ہیں۔ دونوں اداروں کے سربراہان وزیراعظم سے ہدایات لیتے ہیں، آئی جی سندھ تمام واقعے کا مقدمہ درج کرانے سے قاصر ہیں۔ جس ملک میں اعلیٰ افسران کو اغوا کیا جائے وہاں کون خود کو محفوظ تصور کرسکتا ہے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.