کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کا ایک اور وارنٹ گرفتاری

جوڈیشل مجسٹریٹ کی طرف سے قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری مریم نواز کی پیشی کے موقع پر پولیس کے ساتھ لڑائی جھگڑے کے واقعہ اور سرکاری امور میں مداخلت کی وجہ سے جاری کیے گئے

اسلام آباد ( تیز ترین ) مزار قائد کی توہین پر کراچی میں گرفتاراور بعد ازاں رہا ہونے والے کیپٹن ریٹائرڈ صفدر اعوان کے ایک اور وارنٹ گرفتاری جاری کیے گئے ہیں۔ جوڈیشل مجسٹریٹ کی طرف سے قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری مریم نواز کی پیشی کے موقع پر پولیس کے ساتھ لڑائی جھگڑے کے واقعات اور سرکاری امور میں مداخلت کی وجہ سے جاری کیے گئے۔ سابق وزیراعظم میاں محمد نوازشریف کے داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کے علاوہ جہانزیب اعوان کے وارنٹ گارفتاری بھی جاری کیے گئے ہیں۔ عدالت نے ملزمان کونوٹس جاری کرتے ہوئے 5 دسمبر کو دوبارہ بھی طلب کیا ہے۔
یہ امر قابلِ ذکر ہے کہ کراچی میں مزار قائد کے تقدس کو پامال کرنے کے کیس میں مسلم لیگ ن کے رہنما کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کی گرفتاری عمل میں لائی گئی جب کہ اس دوران آئی جی سندھ مشتاق مہر کے مبینہ اغواء کی خبریں بھی زیر گردش رہیں۔  وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کیپٹن (ر) صفدر کی گرفتاری کا ملبہ وفاقی حکومت پر ڈال دیا اور دعویٰ کیا کہ محمد صفدر کی گرفتاری میں ایک وفاقی وزیر ملوث ہے۔ مقدمے کے لیے پولیس پر دباؤ ڈالا گیا، تحریک انصاف کے 2 ایم پی ایز ایف آئی آر کے لیے تھانے آئے۔ ایک وفاقی وزیر نے ایف آئی آر کے لیے الٹی میٹم بھی دیا، ایم پی ایز کو سمجھایا گیا کہ ایسے مقدمہ نہیں ہوتا۔ مزار قائد سے متعلق درخوست پولیس کے پاس نہیں مجسٹریٹ کے پاس درج کی جاتی ہے، تاہم پی ٹی آئی نے وفاص نامی شخص سے درخواست دلوائی گئی کہ اسے جان سے مارنے کی دھمکیاں دی گئی ہیں۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.