امریکی الیکشن 2020، ٹرمپ نے دھاندلی کے الزامات عائد کردیے

ہمارے پاس انتخابی دھاندلی کے شواہد موجود ہیں۔ ڈیموکریٹس انتخابات نہیں جیت سکتے اس لیے ڈاک کا نظام متعارف کرایا گیا، یہ سب ملی بھگت کے ساتھ کچھ کیا گیا۔ ری پبلکن امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کی الزامات سے بھری پریس کانفرنس

واشنگٹن ( تیز ترین ) امریکہ میں ہونے والے صدارتی انتخابات میں ری پبلکن پارٹی کے امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ نے دھاندلی کے الزامات عائد کئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ الیکشن میں ملی بھگت کے ساتھ دھاندلی کی گئی ہے۔ ڈیموکریٹس انتخابات نہیں جیت سکتے اس لیے ڈاک کا نظام متعارف کرایا گیا۔ اگر قانونی ووٹوں کو گنا جائے تو میں تاریخی کامیابی حاصل کر چکا ہوں۔
ایک پریس کانفرنس میں ڈونلڈ ٹرمپ نے الزام عائد کیا ہے کہ ہمارے پاس انتخابی دھاندلی کے شواہد موجود ہیں۔ ڈیموکریٹس کی طرف سے نظام کو کرپٹ بنایا جا رہا ہے۔ اس مقصد کے لیے ہمارے خلاف بڑے مالیاتی اداروں نے فنڈنگ کی اور ڈیموکریٹس بھی جیت کے لیے ہمارے خلاف کروڑوں ڈالر خرچ کر رہے ہیں۔ ڈیموکریٹس کی طرف سے ہمارے مبصرین کو گنتی کے عمل سے باہر نکالا جا رہا ہے، جس کی ایک مثال فلاڈلفیا ہے جہاں ہمارے مبصرین کو باہر نکال دیا گیا ہے۔ جبکہ جارجیا میں تو الیکشن سیٹ اپ ہی ڈیموکریٹس چلا رہے ہیں ۔جارجیا میں 4 گھنٹے سے ووٹوں کی گنتی رکی ہوئی ہے، اس دوران اگر ووٹ غلط گنے گئے تو یہ چوری ہوگی۔دونلڈ ٹرمپ کو اس وقت مایاوسی کا سامنا کرنا پڑا جب ووٹوں کی گنتی رکوانے کی غرض سے دائر کی گئی ٹرمپ کی درخواست مسترد کی گئی۔ ریاست مشی گن کی عدالت نے امریکی صدر کی درخواست مسترد کی، جب کہ اب تک موصول ہونے والے نتائج میں جوبائیڈن کو واضح برتری حاصل ہے۔ امریکی میڈیا کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے ریاست مشی گن میں ووٹوں کی گنتی رکوانے کے لئے عدالت سے رجوع کیا گیا تھا۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.