سعودی عرب میں بارش اور سیلاب کے دوران وادی اور نشیبی علاقے عبور کرنے پر 10 ہزار ریال جرمانے کا قانون بنا لیا گیا۔

اس نئی قانونی شق کی منظوری سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبد العزیز کی صدارت میں ہونے والے کابینہ اجلاس کے دوران دی گئی۔

ریاض ( تیز ترین ) سعودی عرب میں گزشتہ ایک ماہ کے دوران طوفانی بارشیں ہوئیں۔ جن کے باعث کئی علاقے زیر آب آ گئے۔ وادیوں اور نشیبی علاقوں میں کچھ افراد کی ڈوب جانے سے اموات بھی بھی ہوئیں ہیں۔ دریں اثنا کچھ افراد کو ڈوبتے ہوئے بچا لیا گیا ہے۔ اس معاملے پر سعودی حکام کی جانب سے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اہم اعلان جاری کیا گیا ہے جس کے تحت بارش اور طغیانی کے دوران وادیوں اور نشیبی علاقوں کو عبور کرنا ٹریفک خلاف ورزی قرار دیا گیا ہے۔ اس مقصد کے لیے سعودی کابینہ نے ٹریفک خلاف ورزیوں کے قانون میں اہم ترمیم کر کے فہرست نمبر 7میں شق 6 کا اضافہ کر دیا ہے۔ اس شق کے مطابق بارش اور سیلاب کے وقت وادیوں اور نشیبی علاقوں کو عبور کرنا ٹریفک خلاف ورزی ہو گا۔ جس پر 5 سے 10 ہزار ریال جرمانہ عائد کیا جائے گا۔ اس نئی قانونی شق کی منظوری سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبد العزیز کی صدارت میں ہونے والے کابینہ اجلاس کے دوران دی گئی۔ اس شق میں آگاہ کیا گیا ہے کہ اگر کوئی ڈرائیور بارش اور سیلابی ریلے کے وقت وادیوں، نشیبی علاقوں یا سیلاب کے راستے سے گزرنے کی کوشش کرے گا تو اس کی یہ حرکت ٹریفک خلاف ورزی میں شمار کی جائے گی۔ جس پر کم از کم پانچ ہزار اور زیادہ سے زیادہ دس ہزار ریال کا جرمانہ ہو گا۔ سعودیہ میں دیہاتی علاقوں میں سیلابی ریلوں کے دوران وادی عبور کرنے کو لوگ ایک کارنامہ سمجھ کر انجام دینے کی کوشش کرتے ہیں۔ اس بناء ہر سال درجنوں افراد کی اموات ہوتی ہیں۔ اس خطرناک رحجان کو روکنے کی خاطر ٹریفک قوانین میں خاص طور پر ترمیم کر کے نئی شق شامل کی گئی ہے۔ 

Facebook Comments

POST A COMMENT.